جدہ ائیرپورٹ پر کیا هوا.؟ مسافر کیوں چلایا.؟ افتخار چوہدری نے کیا کہا؟ سابق چیف جسٹس کے بیٹے ارسلان افتخار نے ساری حقیقت بتا دی

سابق چیف جسٹس آف پاکستان افتخار چوہدری کے صاحبزادے ارسلان افتخار نے جدہ ائیر پورٹ پر پیش آنے والے واقعہ کی حقیقت بیان کر دی۔ ارسلان افتخار نے بتایا کہ میں اپنے اہل خانہ کے ساتھ عمرہ کے لیے سعودی عرب گیا ہوا تھا جہاں سے میری لندن کی فلائٹ تھی جہاں ہمیں ایک شادی میں شرکت کے لیے جانا تھا۔جدہ ائیر پورٹ پر پہنچے توسکیورٹی چیکنگ کے بعد ہمیں بورڈنگ گارڈ ایشو کر دیا گیا۔جس کے بعد ایک اعلان ہوا کہ بزنس کلاس اور فرسٹ کلاس کے مسافر پہلے آ جائیں۔عموما ائیر پورٹس پر ہر کلاس کی الگ قطار ہوتی ہے لیکن چونکہ جدہ ائیر پورٹ اتنا کھُلا اور وسیع نہیں ہے لہٰذا انہوں نے مسافروں کو خواتین اور مردوں کی قطاروں میں تقسیم کر رکھا تھا ۔اعلان کے بعد میں آگے بڑھا تو لائن میں موجودایک شخص نے چیخنا شروع کر دیا کہ ہم قطار توڑ کر آگے جا رہے ہیں جس پر میں نے اسے اپنا بورڈنگ کارڈ دکھاتے ہوئے کہا کہ میں بزنس کلاس میں ٹریول کر رہا ہوں۔ ارسلان افتخار نے کہا کہ دنیا میں کہیں بھی چلے جائیں بزنس کلاس میں سفر کرنے والے مسافروں کو سب سے پہلے بُلا کر بٹھا دیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اسے سمجھانے کی کوشش کی ۔اس کے پاس کیمرہ پہلے سے ہی آن تھا اور اس نے کسی منفی پراپیگنڈے کے تحت یہ ویڈیو بنائی ۔ ان کا کہنا تھا کہ اس طرح کی ویڈیو ز سے سکیورٹی قوانین کے کھُلے عام خلاف ورزی کی گئی۔جس پر میرے والد جو سابق چیف جسٹس آف پاکستان ہیں، نے مجھ سے کہا کہ میں جس منصب پر رہ چکا ہوں یہ اس کے شایان شان نہیں ہے کہ ہم اس آدمی سے بحث کریں۔ اور اسی لیے ہم وہاں سے چلے گئے۔خیالرہے کہ گذشتہ روز سوشل میڈیا پر سابق چیف جسٹس آف پاکستان افتخار چوہدری اور ان کے بیٹے کی جدہ ائیر پورٹ پر بنائی گئی ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں ظاہر یہ کیا گیا تھا کہ انہوں نے ائیر پورٹ پر مسافروں کی قطار توڑ کر آگے بڑھنے کی کوشش کی ہے

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s