بلااجازت ’دنیا کی چھت‘ پر چڑھنے کی کوشش، 22 ہزار ڈالر جرمانہ

نیپالی حکام نے بلا اجازت ’دنیا کی چھت‘ پر چڑھنے کی کوشش کرنے والے ایک جنوبی افریقی شہری کا پاسپورٹ ضبط کرتے ہوئے اسے بائیس ہزار ڈالر جرمانہ کر دیا ہے۔ یہ اکیلا غیر ملکی بغیر پرمٹ کے ہی ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے نکل پڑا تھا۔

ہمالیہ کی ریاست نیپال کے دارالحکومت کھٹمنڈو سے پیر آٹھ مئی کو ملنے والی نیوز ایجنسی اے ایف پی کی رپورٹوں کے مطابق ملکی حکام نے آج بتایا کہ یہ جنوبی افریقی شہری دنیا کی بلند ترین پہاڑی چوٹی سر کرنے کی غرض سے ماؤنٹ ایورسٹ کی طرف سفر پر تھا کہ اسے فوری طور پر واپس نیچے اترنے کا حکم دے دیا گیا۔

ماؤنٹ ایورسٹ کو سر کرنے کے لیے باقاعدہ اجازت ناموں کے حامل غیر ملکی کوہ پیماؤں کے لیے قائم کردہ حکومتی بیس کیمپ کے رابطہ افسر گیانندرا شریسٹھ نے بتایا کہ اس جنوبی افریقی باشندے کا نام رائن شین ڈیوی ہے اور اس کی عمر 43 برس ہے۔

opop8888

شریسٹھ نے بتایا کہ ڈیوی، جس کے پاس ماؤنٹ ایورسٹ کو سر کرنے کا کوئی پرمٹ نہیں تھا، اکیلا ہی اپنے ارادوں کی تکمیل کے لیے ایورسٹ کو جانے والے پہاڑی راستے کے دوسرے بیس کیمپ تک پہنچ گیا تھا۔

یہ کیمپ سطح سمندر سے قریب 6400 میٹر یا 21 ہزار فٹ کی بلندی پر واقع ہے۔ گیانندرا شریسٹھ کے مطابق یہ غیر ملکی ماؤنٹ ایورسٹ کے دوسرے بیس کیمپ پر پہنچ کر اس لیے آرام کر رہا تھا کہ خود کو اپنے آگے کے سفر کے لیے مسلسل شدید ہوتے جا رہے موسمی حالات کے لیے تیار کر سکے۔

اے ایف پی کے مطابق نیپالی حکام نے اس جنوبی افریقی باشندے کی کوشش کا علم ہونے پر اسے نہ صرف فوری طور پر واپس نیچے اترنے کا حکم دے دیا بلکہ ساتھ ہی اس کا پاسپورٹ ضبط کرتے ہوئے اسے 22 ہزار امریکی ڈالر جرمانے کا فیصلہ بھی سنا دیا۔

یہ اطلاعات بھی ہیں کہ ماؤنٹ ایورسٹ کے دوسرے بیس کیمپ تک پہنچنے کے بعد رائن شین ڈیوی نے، جو خود کو ایک فلم ڈائریکٹر اور پروڈیوسر قرار دیتا ہے، اپنے فیس بک پیج پر لکھا کہ وہ دنیا کی بلند ترین چوٹی کو سر کرنے کی کوشش میں محض چھ گھنٹوں میں سات ہزار میٹر کی بلندی تک پہنچ گیا تھا۔

نیپال میں کسی بھی غیر ملکی کو ماؤنٹ ایورسٹ کو سر کرنے کی کوشش سے پہلے اپنے لیے ایک سرکاری پرمٹ حاصل کرنا ہوتا ہے، جس کے لیے قریب 11 ہزار امریکی ڈالر کے برابر فیس ادا کرنا ہوتی ہے۔ ڈیوی کو اس فیس کا دگنا یعنی 22 ہزار ڈالر جرمانہ اس لیے کیا گیا کہ اس نے اپنے لیے پرمٹ حاصل کرنے کی کوئی کوشش نہیں کی تھی۔

کھٹمنڈو میں نیپالی حکام کے مطابق یہ بھی ممکن ہے کہ اس جنوبی افریقی باشندے کے نیپال میں دوبارہ داخلے پر پانچ سال کے لیے اور اس کے نیپال میں کوہ پیمائی کرنے پر آئندہ دس سال کے لیے پابندی لگا دی جائے۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s