وہ میرے آفس میں کام کرتاتها. ہم نے تنہائی میں بارش میں بھیگنے کا لطف لیا پھر بے قابو ہو کر سب حدیں پھلانگ گئے۔ ایک لڑکی کی سبق آموزاپنی آپبیتی نے سب کو افسردہ کردیا…

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) ہمارے معاشرے میں خواتین کے استحصال کو کسی نہ کسی طور ’جائز‘ بنا ہی لیا جاتا ہے۔ ان کے ساتھ بدسلوکی کا ذمہ دار بھی انہیں ہی قرار دیا جاتا ہے، اور یوں جرم کے مرتکب ہونے والے مرد بڑی آسانی سے خود کو بری الزمہ قرار دے دیتے ہیں۔ اسی استحصال کا نشانہ بننے والی ایک خاتون نے ویب سائٹ اکڑ بکڑ پر اپنی داستان غم کچھ یوں بیان کی ہے:                                                                                                                                                      …

View original post 432 more words

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s