ریپ کیس ،نمٹانے والاسنیئر سیاست دان اور بااثروڈیرا گرفتار

کندھ کوٹ پولیس نے سندھ کے سنیئر سیاست دان اور بااثروڈیرا سردار تاج محمد کو 12 سالہ لڑکی کے گینگ ریپ کیس کو ‘نمٹانے’ اور ‘اصل مجرموں’ کو 18 لاکھ روپے کا جرمانہ کرنے کے دعوے کے بعد گرفتار کرلیا۔

خیال رہے کہ رواں ماہ کے اوائل میں میڈیا نے رپورٹ کیا تھا کہ کندھ کوٹ سے تعلق رکھنے والی گھریلو ملازمہ کم سن بچی کو کراچی میں مبینہ طور پر نشہ آور چیز پلا کر گینگ ریپ کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے سندھ کے انسپکٹر جنرل (آئی جی) کو ایک ہفتے میں رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کی تھی۔

معاملے کی نوعیت اس وقت بدل گئی جب سردار تاج محمد ڈومکی نے اپنی رہائش گاہ پر ایک پریس کانفرنس کے دوران دعویٰ کیا تھا کہ انھوں نے ایک جرگے میں معاملے کو ‘نمٹا’ دیا ہے۔

ان کا دعویٰ تھا کہ لڑکی کا گینگ ریپ نہیں ہوا جس کا اس کے والد عرض محمد گلو نے ایف آئی آر میں دعویٰ کیا تھا لیکن انفرادی طور پر گینگ ریپ کیا گیا تھا۔

تاج محمد ڈومکی کا کہنا تھا کہ اگروہ معاملے پر مداخلت نہ کرتے تو لڑکی کو کبھی بھی عدالتوں سے انصاف نہیں مل سکتا تھا۔

وڈیرے کے جرگے میں پاکستانی قانون کے مطابق متاثرہ لڑکی کو حاصل تمام تحفظ کو مکمل طور پر نظر انداز کیا گیا تھا۔

کند کوٹ کے سینیئر سپرینڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) ڈاکٹر سمیع اللہ سومرو نے اعلیٰ حکام کی ہدایت سردار تاج محمد ڈومکی، عرض محمد گلو اور دیگر 13 افراد جنھوں نے جرگے میں شرکت تھی، کے خلاف سرکار کی مدعیت میں ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دے دیا۔

ایس ایچ او محمد صادق اوڈھو نے صحافیوں کو بتایا کہ ‘ڈومکی کی گرفتاری کے ساتھ ہی پولیس دیگر ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے ماررہی ہے’۔

ان کا کہنا تھا کہ ایف آئی آر سیکشن 310،419،117 اور 143 کے تحت اے ایس آئی محمد مراد لاشاری کی مدعیت میں درج کی گئی ہے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s