پاکستانی تاریخ کے معروف کیس کی مرکزی کردار مختاراں مائی آج کس حال میں ہیں؟تصاویر لنک میں

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان میں کی تاریخ میں سب سے زیادہ مشہور ہونے والے ریپ کیس جسے مختارا مائی کیس کے نام سے جانا جاتا ہے کی مرکزی کردار مختاراں مائی کی نئی تصاویر نے سب کو حیران کر دیا ۔

594508eb030cf

تفصیلات کے مطابق مختاراں مائی ان دنوں امریکہ کے شہر لاس اینجلس میں موجود ہیں جہاں انہوں نے ایک اوپرا میں شرکت کی ہے۔ اوپرا میں ان کی زندگی کے حالاتاور خواتین کے حقوق سے متاثر ہو کر کہانی پیش کی گئی ہے۔ واضح رہے کہ مختاراں مائی کا تعلق جنوبی پنجاب سے ہے جہاں ایک پنچایت کے فیصلے کےتحتان سے مبینہ طور پر اجتماعی زیادتی کا واقعہ پیش آیا اور سپریم کورٹ نے بھی اس واقعہ پر مقدمے کی سماعت کی تھی۔ پاکستان کی تاریخ میں مختاراں مائی کے ساتھ پیش آنا والا یہ واقعہ بہت مشہور ہوا تھا۔ پوری دنیا میں مختاراں مائی کو خواتین کے حقوق کی علمبردار کے طور پر مختلف پروگرامات میں مدعو بھی کیا جاتا ہے۔ یاد رہے کہ مختاراں مائی نے چند سال قبل اپنے علاقے کے ایک پولیس اہلکار سے شادی کر لی تھی جو کہ پہلے سے شادی شدہ اور چار بچوں کا باپ تھا۔ مختاراں مائی کیس میں سپریم کورٹ نے 7گرفتار افراد میں سے ایک شخص کے سوا سب کو باعزت بری کر دیا تھا۔ مختاراں مائی کیس کو بنیاد بنا کر نام نہاد این جی اوز نے پاکستان میں خواتین کے حقوق کے حوالے سے بہت پروپیگنڈہ کیا تھا اور پاکستان کو بدنام کرنے کی کوئی کسر نہ چھوڑی تھی۔

56600217.jpg

مختاراں مائی کیس کو اچھالنے اور پاکستان کو بدنام کرنے کیلئے کئی غیر ملکی طاقتوں نے بھی اپنا کردار ادا کیا تھا۔ امریکی گلیمر میگزین نے مختاراں کو ”سال کی خاتون“ کا اعزاز دیا۔ 12جنوری 2006ءکو فرانس میں اس کے متعلق کتاب شائع ہوئی جس کی بے تحاشا تشہیر کی گئی اس کا ترجمہ جرمن زبانمیں بھی ہوا۔پھر16جنوری 2006ءکو مختاراں مائی پیرس پہنچ گئیں جہاں اس کا استقبال فرانس کے وزیر خارجہ فلپ دوستے بلینزی نے کیا۔ 2مئی 2006ءکو مختاراں نے اقوام متحدہ کے ہیڈ کوارٹرز نیویارک میں تقریر کی۔اگلے رورز اس کا استقبال اقوام متحدہ کے انڈر سیکریٹری جنرل شاشی تھارو نے کیا اور اس کی خوب تعریف کی۔ 31اکتوبر 2006ءکو امریکہ میں اس سےمتعلق ایک اور کتاب شائع ہوئی۔ مارچ 2007ءمیں کونسل آف یورپ سے اس نے 2006ءکا نارتھ ساؤتھ پرائز”جیتا“۔اکتوبر 2010ءمیں کینیڈا کی ایک یونیورسٹی نے اسے ڈاکٹریٹ کی اعزازی ڈگری دیدی۔ اس سے قبل کینیڈا نے اسے شہریت دینے کا بھی اعلان کیا تھا، پاکستان نے بھی بالاآخر 2اگست کو مختاراں مائی کو فاطمہ جناح گولڈ میڈل اور 5لاکھ روپے کا تعاون پیش کیا۔مختاراں مائی پر دولت ایسی مہربان ہوئی کہ کئی کئی گاڑیاں، لمبا چوڑا گھر، دفاتر، این جی اوز، اسکول اور نوکروں کی فوج ظفر موج پلک جھپکتے ہی آگئی جیسے کسی نے جادو کی چھڑی ۔ مختاراں مائی نے اس دوران فیشن شو میں بھی شرکت کی اور ریمپ پر واک کی ۔جنوبی پنجاب کے پسماندہ گائوں کی مختاراں مائی نے چند ہی سالوں میں امریکا، لندن، کینیڈا، یورپ اور نہ جانےکہاں کہاں کا سفر عیش و عشرت سے طے کیا۔مختاراں مائی کے بیرون دوروں سے دنیا بھر میں ملکی وقار کوخاک میں ملایاگیا،اور ان پر ڈالروں کی برسات ہوتی رہی جو تاحال بھی جاری ہے۔

حالیہ دنوں امریکہ میں اوپرا کے دوران مختاراں مائی کی اپنی سرگزشت پر پیش کئے گئے ڈرامے کے دوران موجودگی کی ایک تصویر

 

مختاراں مائی سابق وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن کے ساتھ جبکہ دوسری تصویر میں وہ پیرس میں موجود ہیں عقب میں ایفل ٹاور بھی نـظر آرہا ہے

 

ایک فیشن شو کے دوران مختاراں مائی ریمپ پر واک کر رہی ہیں

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s