”میراسگا بھائی بھی میرے ذریعے پیسے کمانے کے لیے یہ شرمناک کام کرتا تھا“سنی لیون نے پہلی بار اپنی زندگی کے اہم رازوں سے پردہ اٹھا دیا.

 

بالی ووڈ کی بے باک اداکارہ سنی لیون کہتی ہیں کہ ان کا بھائی کالج کے دنوں میں پیسے کمانے کے لیے اپنے دوستوں میں ان ہی کی تصاویر بیچتا تھا۔

sv2.jpg

کینیڈین نژاد بھارتی اداکارہ سنی لیون کی زندگی پر ایک دستاویزی فلم بنائی گئی ہے۔ جس میں انہوں نے کئی اہم انکشافات کئے ہیں۔ جس میں انہوں نے بتایا ہے کہ انہوں نے اپنی والدہ کو اپنی آنکھوں کے سامنے مرتے دیکھا ہے۔ آخری وقت میں انہوں نے خود والدہ کو دوا دی تھی جس کے بعد وہ سونے چلی گئیں. کبھی کبھی وہ سوچتی ہیں کہ ان کی دی ہوئی دوائی نے والدہ کی جان لے لی۔ انہیں کبھی ایسا نہیں لگا کہ وہ اپنی والدہ کی قاتل ہیں لیکن حقیقت یہ ہے کہ وہ دوائی دینے کے فوراً بعد مر گئی تھیں۔

sunny-leone-203a.jpg

سنی لیون کا کہنا تھا کہ وہ بہت اچھا رقص کرلیتی ہیں، اس لیے لوگ چاہتے تھے کہ وہ ان کی شادیوں میں ڈانس کریں اور وہ ایسا کرتی بھی تھیں کیونکہ یہ صرف اور صرف خوشی کے ماحول کو دوبالا کرنے کے لیے ہوتا تھا۔

Sunny-Leone-menforce7-new.jpg

بے باک اداکارہ کا کہنا تھا کہ جب انہوں نے اپنے کیرئیر کا آغاز کیا تو انہوں نے اپنے لیے بھائی سندیپ ووہرا کی عرفیت ’سنی‘ استعمال کرنا شروع کردیا، اس پر بھائی کو تو کوئی اعتراض نہیں تھا لیکن والدہ کو جب اس کا علم ہوا تو وہ بہت غصہ ہوئیں۔ اپنے کیرئیر کے دوران وہ اپنے بھائی کے کالج کے دوستوں میں بہت مشہور تھیں ،ایک روز بھائی نے کہا کہ وہ کچھ اضافی پیسے کمانا چاہتا ہے اس کے لیے کیا وہ اپنی کچھ تصویریں دے گی، جس پر انہوں نے بھائی سے پوچھا کہ کیا وہ اس کے ذریعے پیسے کمانا چاہتا ہے۔ اور اگر ایسا ہے تو اسے کوئی اعتراض نہیں لیکن اس کے ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ کہ وہ کوئی بھی تصویر 10 ڈالر سے کم میں نہ بیچے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s