حامیم نامی بد بخت کون تھا جس نے شریعت محمدی کے مقابلے میں جو شریعت ایجاد کی اس میں نماز ،روزے ،حج ،زکٰوۃ،وضو کو کیا حیثیت دی تھی؟جان کر آپ توبہ استغفار شروع کردیں گے

نیا اسلام اور اپنی شریعت گھڑ کر مسلمانوں کو گمراہ کرنے والوں میں حامیم نامی بھی ایسا بدبخت تھا جس نے کذب کیا اور جھوٹی نبوت کا ڈرامہ رچا کر لوگوں کو اپنے علم اور شعبدوں سے اسیر کئے رکھتا ۔
حضرت مولانا یوسف لدھیانوی نے جھوٹے نبیوں پر لکھی گئی کتاب میں بیان کیا ہے کہ حامیم نے شریعت محمدیہ کے مقابلے میں اس مرتد نے اپنی ایک خانہ ساز شریعت گھڑی تھی ۔ اس نے صرف 2نمازوں کا حکم صادر کیا۔ رمضان کے روزوں کی جگہ رمضان کے آخری عشرہ کے 3، شوال کے 2اور ہر بدھ اور جمعرات کو دوپہر بارہ بجے تک کا روزہ متعین کیا۔ حج کو ساقط کردیا، زکوٰۃ ختم کردی، نماز سے پہلے وضو کی شرط ختم کردی، خنزیر کو حلال کردیا۔ ایک کتاب بھی لکھی جسے کلام الٰہی کے طور پر پیش کیا جاتا تھا۔حامیم 319ھ میں تبخیر کے مقام پر ایک جنگ میں مارا گیا لیکن جو مذہب اور عقیدہ اس نے رائج کیا وہ ایک عرصے تک مخلوق خدا کی گمراہی کا سبب بنتا رہا۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

w

Connecting to %s