جناح اسپتال سے گرفتار ہونے والی جعلی لیڈی ڈاکٹر کا دوسال سے سوشل میڈیا پر ‘کلینک چلانے کا انکشاف

کراچی: ویب ڈیسک ::پولیس کے مطابق جعلساز خاتون ڈاکٹرز کو میسج کرکے بیماریاں بتاتی تھی، جس پر ڈاکٹرز اسے نسخہ بتا دیتے تھے، جو ملزمہ مریضوں کو میسج کر دیتی تھی۔پولیس کے تفتیشی افسر کے مطابق جناح اسپتال کی ڈاکٹر ثمرین، اسٹاف افسر اور ایک سیکیورٹی اہلکار کو بیان ریکارڈ کرنے کے لیے نوٹس بھیجا گیا، تاہم وہ ویمن تھانے نہیں آئے۔پولیس ذرائع کے مطابق ملزمہ کے ایک معروف گائناکالوجسٹ سمیت کئی سرکاری ڈاکٹرز سے روابط ہیں۔ذرائع کے مطابق ملزمہ سے برآمد 3 میں سے 2 موبائل فونز کا فرانزک ٹیسٹ کیا جا چکا ہے جبکہ ایک موبائل فون خراب تھا۔موبائل فونز کے فرانزک ٹیسٹ کے مطابق خاتون 2016 سے ڈاکٹر علی سے رابطے میں تھیں جبکہ جناح اسپتال کی ایک گائنا کولوجسٹ سے بھی ان کا رابطہ تھا۔ایس ایچ او ویمن پولیس انسپکٹر سیدہ غزالہ نے بتایا تھا کہ کورنگی کی رہائشی عائشہ میٹرک پاس ہے اور ایک سال سے گائنی وارڈ میں بطور ڈاکٹر کام کر رہی تھی، جس کے خلاف کارروائی جناح اسپتال کے گائنی وارڈ نمبر 1 کی سیکیورٹی کی اطلاع پر کی گئی تھی۔انسپکٹر سیدہ غزالہ نے مزید بتایا تھا کہ جعلساز خاتون پر وارڈ سے نوزائیدہ بچے اغوا کرنے والے گروہ سے منسلک ہونے کا شبہ ہے جبکہ اس بات کا بھی شبہ ہے کہ وہ گائنی وارڈ میں غیرقانونی آپریشنز کرانے کی خواہش مند خواتین کو شکار بنایا کرتی تھیں۔واضح رہے کہ رواں ماہ 13 مارچ کو جناح اسپتال کے گائنی وارڈ سے ایک جعلی لیڈی ڈاکٹر کو گرفتار کیا گیا تھا، جسے عدالت نے 26 مارچ تک جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s